وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈالر کی حقیقی قیمت 200 روپے سے کم ہے

ڈالر کی قیمت میں کمی لانے کیلئے حکومت کا بلا جواز ڈالر خریداری کرنے والوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

ڈالر کی خریداری میں ملوث بینک کو کسی صورت بھی رعایت نہیں دی جائے گی۔
اسٹیٹ بینک آف پاکستان میں پاکستان کی تمام بڑی فاریکس ایکسچینج کمپنیوں کے سربراہان نے ملاقات کی۔
طارق باجوہ، طارق پاشا، جمیل احمد اور فنانس ڈویژن اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے سینئر افسران نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔
فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے چیئرمین ملک محمد بوستان، شیخ علاؤالدین راوی ایکسچینج، ظفر سلطان پراچہ، سیکرٹری جنرل اور پاکستان کی معروف فاریکس کمپنیوں کے سی ای اوز نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس کے دوران وفاقی وزیر خزانہ نے ملک کی معاشی صورتحال پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی معیشت کو مستحکم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے، اس مقصد کے لیے حکومت نے گزشتہ چند مہینوں میں سخت فیصلے کیے جو پاکستان کو معاشی بحالی کی راہ پر ڈالنے کے لیے ضروری تھے۔
پاکستان کی سرکردہ ایکسچینج کمپنیوں کے سربراہان نے حکومت کی مالیاتی اور مالیاتی پالیسیوں پر اپنے غیر متزلزل اعتماد کا اظہار کیا
اور اس مقصد کے حصول کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کے اپنے پختہ عزم کا اظہار کیا۔
انہوں نے وزیر خزانہ کو پاکستان کی معاشی اور مالیاتی مضبوطی کو یقینی بنانے کے لیے اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔
اسحاق ڈار نے کہا کہ اکتوبر کے آخر تک ڈالر کی قیمت 200 روپے تک لے آئیں گے،
تاہم ملکی کرنسی مارکیٹ میں روپیہ کے کمزور ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.