www.baithak.news

عدالتی حراست اور پولیس حراست میں فرق

اکثر ہم خبروں میں سنتے/دیکھتے/پڑھتے ہیں کہ فلاں شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ یا سنا ہے کہ ایک ملزم کو ایک خاص مدت کے لیے عدالتی تحویل میں بھیجا گیا ہے۔ ایسے میں اکثر لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ دونوں ایک ہی عمل ہیں لیکن ان دونوں میں فرق ہے۔ تو آئیے جانتے ہیں کہ کیا فرق ہے؟
جرائم سے متعلق مقدمات میں کسی بھی ملزم کو عدالتی تحویل یا پولیس کی تحویل میں رکھا جاتا ہے۔ اس کے پیچھے ایک خاص مقصد ہے، حالانکہ یہ ضروری نہیں کہ ملزم کو حراست میں رکھا جائے جبکہ گرفتاری میں حراست ہوتی ہے۔ ایک ملزم کو کسی خاص مقصد کے لیے پولیس کی تحویل میں یا عدالتی تحویل میں رکھا جاتا ہے۔
ملزم کو حراست میں رکھا جاتا ہے تاکہ وہ کیس سے متعلق کسی ثبوت کے ساتھ چھیڑ چھاڑ نہ کر سکے یا کسی گواہ کو دھمکا یا متاثر نہ کر سکے۔
جب کسی بھی جرم میں ملزم کو مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا جاتا ہے تو وہاں اس کی تحویل مقرر کر دی جاتی ہے۔ یہ مجسٹریٹ فیصلہ کرتا ہے کہ آیا ملزم کو عدالتی تحویل میں رکھنا ہے یا اسے پولیس کی تحویل میں بھیجنا ہے۔ ایسے معاملات میں جہاں ملزم کو عدالتی تحویل میں بھیجا جاتا ہے، پولیس کو کسی بھی قسم کی پوچھ گچھ کے لیے عدالت سے اجازت لینا پڑتی ہے۔
عدالتی تحویل میں بھیجے گئے ملزمان کو مکمل تحفظ حاصل ہے۔ ایک کیس میں ملزم کو ضمانت ملنے تک یا کیس ختم ہونے تک عدالتی حراست میں رہنا پڑ سکتا ہے۔
کسی بھی مجرمانہ معاملے میں جب پولیس کسی ملزم کو گرفتار کر کے لاک اپ میں ڈالتی ہے تو اسے پولیس حراست کہا جاتا ہے ۔ حراست میں لینے کے بعد پولیس متعلقہ معاملے میں ملزم سے پوچھ گچھ کر سکتی ہے۔ اس کے لیے اسے مجسٹریٹ سے اجازت لینے کی ضرورت نہیں ہے۔
قواعد کے مطابق پولیس کی تحویل میں موجود شخص کو 24 گھنٹے کے اندر قریبی مجسٹریٹ کے سامنے پیش کرنا ہوتا ہے جس کے بعد مجسٹریٹ ملزم کو عدالتی تحویل یا پولیس کی تحویل میں بھیجنے کا فیصلہ کرتا ہے۔ پولیس کا محکمہ پولیس حراست کے دوران ملزمان کی حفاظت کا خیال رکھتا ہے۔

غیر منظور شدہ کالونی فروخت کرنیوالے ملزم کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری پر سماعت ملتوی
بیرون ملک بھجوانے کا جھانسہ دیکر رقم بٹورنے میں ملوث ملزم کا جوڈیشل ریمانڈ منظور
حملے سعودی عرب اور خطہ کے امن کیلئے خطرہ
کراچی سکینڈل: راہ چلتی لڑکی کو ہراساں کرنے والے نوجوان کو پہچان لیا گیا .
فورٹ منرو سے بلوچستان سمگلنگ پکڑی گئی
پولیس چھاپہ،17افراد گرفتار، طلبہ کا احتجاجی مظاہرہ
4 سالہ معصوم بچے سے زیادتی
نشتر ہسپتال سکینڈل ، بدعنوانی کی نئی کاروائی
مرادار گوشت کھلانے والوں کی شامت،مجسٹریٹ نعمان عابدبھٹہ
جامعہ زکریا سکینڈل : بی زید یو بد عنوانی کا ایک اور باب کھل گیا
چینی محنت کش کی ہلاکت با اثر فیکٹری مالک اور انتظامیہ مل گئے
بلند عمارتوں اور پلازوں میں ایمرجنسی سے نمٹنے کیلئے انتظامات، کلیئرنس سرٹیفکیٹ کا حصول لازمی، 30مئی ڈیڈ لائن
ڈاکو34لاکھ لوٹ کر فرار، پولیس سے آمنا سامنا، 2ملزم زخمی حالت میں گرفتار، رقم برآمد
کراچی سے تین لڑکیاں لاپتہ
نامعلوم خواجہ سرا کی تشدد زدہ لاش برآمد
نجی ڈسٹری بیوٹر کے اکاؤنٹنٹ سے مسلح ڈاکوؤں بھاری رقم چھین کر فرار
خاتون سے ٹرین میں اجتماعی زیادتی، ملزموں کی گرفتاری کا ٹاسک
ٹرین زیادتی کے مرکزی ملزم ریمانڈ ناکس تفتیش پر حکام کے سرزنش
قبرستان سے نومولود ٗ معمر شخص کی جھولتی لاش برآمد
رحیم یارخان،رشتہ کے تنازعہ کی رنجش پرچارملزمان نے نوجوان کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتاردیا
بین الصوبائی ڈکیت گینگ کی پولیس پر فائرنگ ٗ 2 کارندے گرفتار
شہباز تتلہ قتل کیس:سابق ایس ایس پی مفخر عدیل نے سزا چیلنج کردی
ظہیرالدین علیزئی سمیت 13ملزموں کیخلاف مقدمہ کی 9جون کو سماعت
مظفرگڑھ: غیرت کے نام پر قتل کرنیوالا ملزم گرفتار
لاکھوں روپے کا فراڈ کیس، ملوث ملزم کی عبوری ضمانت 8 جون تک ملتوی
16 سالہ لڑکی اغوا ،مقدمہ درج
نامعلوم افراد نے نقاب لگاکر لاکھوں روپے مالیت کے موبائل فون ،نقدی چرالی
ملتان میں زہر بکنے لگا
وائس چیئرمین یوسی 47 ملتان کے بھائی سے 30لیٹر شراب برآمد
نئے آئی جی کی آمد 6 ملزم فرار
غیر قانونی پلازہ پیس اینڈ پیس ایک اور مجرمانہ عمل سامنے آ گیا
ٹریکٹر ڈرائیور سعید کے اندھے قتل کا ڈراپ سین، 2 ملزمان گرفتار
سرگودھا’بھائی کے قاتل کو فائرنگ کر کے موت کے گھاٹ اتار دیا
نامعلوم ڈاکو کار سوار سے 12لاکھ لوٹ کرفرار
اشتہاری اور ناجائز اسلحہ کے ملزمان گرفتار

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.