لینڈ ریکارڈ موبائل ایپ کا اجراء ۔۔۔۔۔۔!

ایک رپورٹ کے مطابق پنجاب لینڈ ریکارڈ کی موبائل ایپ 15 دسمبر 2022 سے پہلے الاونچ کی جائے گی۔

جو شہری موبائل ایپ کا استعمال نہیں کر سکتے ان کو واٹس ایپ کے ذریعے فرد کے حصول سمیت دیگر سہولیات فراہم کی جا سکیں گی ۔موبائل ایپ کے قیام سے رجسٹری محرر کے دفاتر اور محافظ خانے ختم ہو جائیں گے۔لاہور کے تمام شہریوں کی رجسٹریوں کا ریکارڈ آن لائن کر دیا گیا ہے ۔ایپ کے ذریعے دو فریقین کے مابین معاہدے کو آن لائن رجسٹرڈ کیا جا سکے گا۔شہری موبائل ایپ کی مدد سے پراپرٹی کی ٹرانسفر فیسز بھی آن لائن جمع کروا سکیں گے ۔اب ایک پراپرٹی کی 03 رجسٹریاں نہیں ہو سکیں گی، پراپرٹی ٹرانسفر میں فراڈ کا تصور ہی ختم ہو جائے گا۔
موبائل ایپ کے ذریعے شہری اپنی رجسٹری آن لائن دیکھ سکیں گے۔ موبائل ایپ کا قیام کرپشن کے خاتمے کے لیے سود مند ثابت ہو گا ۔ایپ کے ذریعے ڈپٹی کمشنرز اور اسسٹنٹ کمشنرز اپنے دفاتر کی حاضری سمیت برانچز کو بھی مانیٹر کر سکیں گے۔شہری ای اسٹیمپ پی ایل آر اے کی ویب سائٹ سے حاصل کر سکیں گے۔ موبائل ایپ کے قیام سے بورڈ آف ریونیو کو کاغذ اور پرنٹنگ کی مد میں سالانہ 70 کروڑ کی بچت ہو گی۔ اسٹامپ انسپکٹرز پرائیویٹ ہاوسنگ سوسائیٹوں کے آڈٹ کو یقینی بنائیں ۔رجسٹرار پراپرٹی ٹرانسفر فیسز کی تصدیق کے بعد پرائیویٹ ہاوسنگ سوسائیٹز کے ٹرانسفر لیٹر کو رجسٹر کریں۔ بورڈ آف ریونیو کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے لیے قوانین میں ترمیم کی جا رہی ہیں۔
سنیئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب زاہد اختر زمان کے مطابق بورڈ آف ریونیو شہریوں کو جدید ترین سہولیات فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ سنیئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب زاہد اختر زمان کی زیرصدارت اہم اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں سیکرٹری ریونیو مہر شفقت اللہ مشتاق، سیکرٹری ٹیکسز، ممبر ٹیکسز نوید حیدر شیرازی ،ڈی جی پی ایل آر اے اکرام الحق ، چیف اسٹیمپ انسپکٹر محمد خالد سمیت دیگر افسران کی شرکت کی۔ پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کا یہ اقدام ریونیو میں کرپشن کی روک تھام کے لیے عملی قدم ہے۔ اگر اس کی روح کے مطابق عمل کیا جائے تو اس کے دور رس نتائج سامنے آ سکتے ہیں ۔
شہری جائیداد کی خرید وفروخت میں جعلسازی عروج پر پہنچ گئی ہے اور ملتان ، لاہور، فیصل آباد سمیت بڑے شہروں میں یہ سلسلہ جاری ہے اور درجنوں افراد کو جعلی رجسٹریوں کے ذریعے ان کی قیمتی جائیداد سے محروم کر دیا گیا اور یہ سلسلہ ہے کہ رکنے کا نام ہی نہیں لے رہا ۔ بہر حال حکومت پنجاب کا یہ اقدام دیر آید درست آید ہے۔ امید ہے کہ بیورو کریسی اس کو ناکام نہیں بنا سکے گی۔ 

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.