لیب میں تیار کردہ چکن ’محفوظ‘ قرار: ’یہ خوراک کی صنعت کے لیے تاریخی فیصلہ ہے‘

امریکہ میں لیبارٹری میں تیار کیے گئے گوشت کے ایک پراڈکٹ کو انسانی خوراک کے اعتبار سے محفوظ قرار دیا گیا ہے۔

امریکی ادارے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) نے سیل کلچرڈ چکن کو ’محتاط معائنے‘ کے بعد منظوری دی ہے۔
اس چکن کو سٹیل کے ڈبوں میں اپ سائیڈ فوڈز نامی ایک کمپنی نے تیار کیا ہے۔ اسے بنانے کے لیے زندہ جانوروں کی خلیات استعمال کر کے اس کی لیب میں افزائش کی گئی۔
امریکی محکمۂ زراعت کے ایک جائزے کے بعد اس پراڈکٹ کو فروخت کیا جاسکے گا۔ایف ڈی اے نے کہا ہے کہ اس نے یہ فیصلہ کمپنی کی فراہم کردہ معلومات اور ڈیٹا کی بنیاد پر کیا ہے اور فی الحال اس بارے میں کوئی سوالات نہیں۔
کمپنی کے سربراہ اوما ولیتی نے کہا ہے کہ ’ہم نے اپ سائیڈ فوڈز ایسے وقت میں شروع کیا جب بہت سے لوگوں کو اس پر اعتراض تھا۔ آج ہمیں اپنے کلٹیویٹڈ میٹ (اُگائے گئے گوشت) پر ایف ڈی اے کی منظوری ملی ہے۔‘
تاہم اپ سائیڈ فوڈز کو اپنی اشیا فروخت کرنے سے قبل کئی رکاوٹوں سے گزرنا ہوگا۔ مثلاً وہ مقام جہاں یہ کھانا تیار کیا جاتا ہے، اسے اجازت نامہ درکار ہوگا لیکن ولیتی نے کہا کہ ایف ڈی اے کی منظوری اشیا خورد و نوش کی صنعت کے لیے ’ایک تاریخی لمحہ ہے۔‘

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.