ملتان:سپریم کورٹ نے زکریا یونیورسٹی لاء سکینڈل کومیگافراڈ قرار دیتے ہوئےایف آئی اے کومکمل تحقیقات کرکے6 ہفتے میں رپورٹ پیش کرنیکا حکم دیدیا

11 لاء کالجز کیجانب سے یونیورسٹی سے الحاق ختم کرنے کیخلاف ری ویو پٹیشن خارج کر دی گئی

ایل ایل بی 5 سالہ پروگرام میں ملتان کے الحاق شدہ لاء کالجز کا الحاق بھی ختم کرنیکی ہدایت، تفصیل کے مطابق گزشتہ روز سپریم کورٹ

آف پاکستان میں بہاءالدین زکریا یونیورسٹی ملتان کے ایل ایل بی سکینڈل بارے سماعت ہوئی جس میں معزز عدالت نے لاء سکینڈل کو بہت بڑا فراڈ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس میگا فراد کے اصل حقائق کی چھان بین کے لیے ایف آئی اے کو مکمل تحقیقات کے لیے مزید 6 ہفتوں کا وقت دے رہے ہیں
علاوہ ازیں جن 11 لاء کالجز نے الحاق ختم کرنے کیخلاف سپریم کورٹ آف پاکستان میں اپیل دائر کی تھی ان کی ری ویو پٹیشن خارج کر دی گئی اور عدالت عظمیٰ نے یونیورسٹی انتظامیہ کو ایل ایل بی پانچ سالہ پروگرام میں الحاق کئے گئےملتان کے لاء کالجز کا الحاق ختم کرنیکی ہدایت بھی کی ہے
واضح رہے اس سے قبل سپریم کورٹ کے حکم پرساہیوال کے11 لاء کالجز کا الحاق بھی یونیورسٹی کی الحاق کمیٹی کی سفارشات پر ختم کر دیاگیاہے ۔جن 11 لاء کالجز کا الحاق واپس لے لیا گیا تھا ان کالجز میں پاکستان لاء کالج پاکپتن، محمڈن لاء کالج ساہیوال ،ملتان لاء کالج ساہیوال ،لمٹ لاء کالج ساہیوال،پاکستان سکول آف لاء کالج پاکپتن، کمانڈلاء کالج،منٹگمری لاء کالج،جسٹس لاء کالج پاکپتن ،آئی ایل ایم لاء کالج ساہیوال، جوہرلاء کالج ساہیوال اور قائد اعظم لاء کالج ساہیوال شامل ہیں، سپریم کورٹ کے سخت اقدامات کے باعث یہ امید کی جا سکتی ہے کہ گھر بیٹھ کر قانون کی ڈگری حاصل کرنے کا سلسلہ اب مزید نہیں چلے گا اور یہ خوش آئند بات ہے ۔

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.