موبائل اکاؤنٹ کی مدد سے گوگل پلے سٹور تک رسائی کی معطلی پاکستانی صارفین کو کیسے متاثر کرے گی؟

پاکستان کے سٹیٹ بینک کی جانب سے ڈائریکٹ کیریئر بلنگ (ڈی سی بی) یعنی براہ راست ادائیگیوں کے نظام کو معطل کر دیا گیا ہے

جس کے بعد پاکستانی صارفین اپنے موبائل فون اکاؤنٹ میں موجود رقم کے ذریعے گوگل پلے سٹور سے اپلیکیشنز (ایپس) ڈاون لوڈ نہیں کر سکیں گے۔
تاہم صارفین کو ڈیبٹ کارڈ اور کریڈٹ کارڈ کے ذریعے گوگل پلے سٹور سے ایپس ڈاون لوڈ کرنے کی سہولت میسر ہو گی۔
پاکستان میں کام کرنے والی ٹیلی کام کمپنیوں کی جانب سے وفاقی حکومت کو لکھے گئے ایک مشترکہ خط میں اس کی نشاندہی کی گئی کہ ادائیگی کے اس نظام کی معطلی سے پاکستان میں عالمی اداروں گوگل، ایمازون اور میٹا وغیرہ کی جانب سے پیش کی جانے والی خدمات متاثر ہوں گی اور اس سے ملک کے ٹیلی کام اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔
اگرچہ پاکستان میں صارفین کے پاس کریڈٹ اور اے ٹی ایم کارڈ کے ذریعے ادائیگی کا آپشن موجود ہے تاہم پاکستان میں گوگل پلے سٹور سے ایپس ڈاون لوڈ کرنے والے بہت کم صارفین یہ سہولت استعمال کرتے ہیں جبکہ ڈی سی بی کے ذریعے صارفین کے فون میں موجود ری چارج سے ٹیلی کام کمپنی کسی ایپ کے ڈاون لوڈ کرنے پر پیسے کاٹ کر کے اپنے بینک کے ذریعے بین الاقوامی اداروں کو ادائیگی کر دیتی ہے۔

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.