پاکستان کے گھر انگلینڈ کا کلین سویپ، بابر اعظم کو صحافیوں نے گھیر لیا۔

اس فتح کے ساتھ ہی انگلینڈ نے پاکستان کو اپنے گھر پر تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں 3-0 سے شکست دے دی۔

پیر کو انگلینڈ نے دو وکٹوں کے نقصان پر 112 رنز بنائے۔منگل کو اس سے آگے کھیلنا شروع کیا اور 38 منٹ میں 167 کا آسان ہدف حاصل کر لیا۔
اس سے قبل انگلینڈ نے راولپنڈی میں پہلا ٹیسٹ میچ 74 رنز سے اور ملتان میں دوسرا ٹیسٹ 26 رنز سے جیتا تھا۔یہ انگلینڈ کا 2005 کے بعد ٹیسٹ میچ کے لیے پاکستان کا پہلا دورہ تھا۔
انگلینڈ نے سیکیورٹی خدشات کے باعث پاکستان کا دورہ کرنے سے انکار کر دیا ہے۔
انگلینڈ کی اس کلین سویپ کے بعد پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم کو تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔3-0 سے شکست کے بعد بابر اعظم جب میڈیا کے سامنے آئے تو پاکستانی صحافیوں نے ان سے کئی تند و تیز سوالات کیے۔
بابر اعظم سے سوال کیا گیا کہ وہ کپتانی کی وجہ سے دباؤ میں ہیں اور ٹھیک سے بیٹنگ نہیں کر پا رہے ہیں۔ ایسے میں وہ بیٹنگ پر پوری توجہ کیوں نہ دے؟ گھر میں اس ذلت آمیز شکست کو وہ کس نظر سے دیکھتا ہے؟
ان سوالات کے جواب میں بابر اعظم نے کہا کہ یہ ہمارے لیے بہت مایوس کن ہے۔ انگلینڈ نے جس طرح کرکٹ کھیلی، اس کی تعریف ہونی چاہیے۔ دوسری طرف ہمارے فاسٹ بولرز فٹ نہیں تھے۔ ہم نے نئے لوگوں کو موقع دیا لیکن چیزیں پلان کے مطابق نہیں ہوئیں۔ جہاں تک دباؤ کا تعلق ہے، میں اس سے لطف اندوز ہوں۔ اس سے میری بیٹنگ پر کوئی فرق نہیں پڑتا۔ یہ میرے لیے وقار کی بات ہے۔ میں ملک کے لیے کھیلتا ہوں۔ اگر ٹیم ہارتی ہے تو میں اس کی ذمہ داری لیتا ہوں۔

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.