ورلڈ کپ: فرانس اور ارجنٹائن کی تاریخ کا سب سے سنسنی خیز فائنل کون سا تھا؟

انگلینڈ کے سابق دفاعی کھلاڑی ریو فرڈینینڈ نے فیفا ورلڈ کپ کے انتہائی دلچسپ فائنل میچ کا خلاصہ ان الفاظ میں کیا –

‘وہ میچ جسے ہم میں سے بہت سے لوگ ورلڈ کپ کی تاریخ کا بہترین فائنل میچ تصور کر رہے ہیں۔’
اس میچ میں سب کچھ تھا۔ سپر اسٹار لیونل میسی اور فرانس کے اسٹار اسٹرائیکر کائلان ایمباپے کا ٹکراؤ، شاندار واپسی اور پنالٹی شوٹ آؤٹ کا فیصلہ کن دل کو روک دینے والا۔
میچ کے دوران اور میچ کے بعد سوشل میڈیا پر جذبات کا سیلاب آگیا۔
دنیا بھر میں فٹ بال کے شائقین اس میچ کو دیکھ کر اس قدر مسحور ہوئے کہ اسکرین سے نظریں ہٹانا مشکل ہوگیا۔ قطر کے لوسیل سٹیڈیم میں یہ میچ دیکھنے والے ایک تاریخی میچ کے گواہ بن گئے۔
بی بی سی ون سے بات کرتے ہوئے فرڈینینڈ کا کہنا تھا کہ ‘میں نے آج جو میچ دیکھا وہ میری سوچ سے باہر تھا، دو عظیم ٹیمیں آخری دم تک سخت لڑتی رہیں اور کوئی بھی ٹیم آخر تک ہار ماننے کو تیار نہیں’۔
دو ٹیموں کے دو سپر اسٹارز اس کا مقابلہ کر رہے ہیں، گول فار گول… لاجواب۔”
انگلینڈ کے سابق اسٹرائیکر ایلن شیرر کا اس میچ کے بارے میں کہنا ہے کہ “ہم اپنی سانسیں روکے ہوئے تھے، یہ ایک ایسا فائنل تھا جسے دیکھ کر بھی یقین کرنا مشکل تھا، میں نے ایسا کچھ نہیں دیکھا، اتنا زبردست اور امید ہے کہ میں مزید دیکھنے کی کوشش کروں گا۔ دیکھنے کے قابل بھی نہیں۔

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.